ShareThis

Monday, April 26, 2010

لاہور ، راولپنڈی اور ملتان میں ایم کیو ایم کا پنجاب کنونشن

ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے کہا کہ انتظامی یونٹ کی بنیاد پر نئے صوبوں کی تشکیل غداری نہیں، سرمایہ دار اور جاگیردارسدھر جائیں ورنہ ان پر کتے چھوڑے جائیں گے۔لاہور ، راولپنڈی اور ملتان میں ایم کیو ایم کے ورکرز کنونشن سے بیک وقت ٹیلی فونک خطاب کرتے ہوئے قائد ایم کیو ایم نے کہا ہے کہ ملک میں ہزارہ، سرائیکی اور دیگر صوبوں کا مطالبہ ہورہا ہے۔ انتظامی یونٹ کی بنیاد پر ان کو صوبوں کا درجہ دیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ متحدہ قومی موومنٹ نے اٹھارہویں ترمیم میں سیاسی جماعتوں میں انتخابات کی لازمی شرط کے خاتمے کی بھی مخالف کی تھی۔

Saturday, April 24, 2010

میری بھانجی کیلئےدعا کریں

اسلام علیکم۔
امید ہے کہ آپ سب دوست خیریت سے ہونگے۔۔۔۔۔  میری تمام دوستوں سے درخواست ہے کہ میری بھانجی آمنہ  جس کو حفصہ بھی کہتے ہیں اس طبیعت کافی ناسازہے

Sunday, April 18, 2010

صوبہ تو بن گیا


جہاں تک ہزارہ قبائل کی تاریخ کا تعلق ہے‘ اسے علاقے کے جغرافیائی اور تہذیبی پس منظر میں نہیں دیکھا جا سکتا۔ کیونکہ یہاں پر وہ پرانی قومیں بھی آباد ہیں‘ جو تاریخی اعتبار سے مقامی ہیں اور متعدد چھوٹی چھوٹی زبانیں بولتی ہیں۔ مگر ان سب کا رشتہ کسی نہ کسی انداز میں ہندکو سے جا ملتا ہے۔ جب کہ اصل ہزارہ قبائل کی زبان پشتو اور فارسی ہے۔

Friday, April 16, 2010

ہزارہ صوبہ تحریک

آج کل آئینی اصطلاحات کمیٹی کا بڑا چرچا ہے  ـ صوبہ سرحد کی بڑی پارٹی اے این پی کا اصرار ہے کہ صوبہ سرحد کا نام تبدیل کر کے پختون خواہ رکھا جائے ـ اس نام کے رکھنے پر صوبے کے بعض علاقوں کے رہنے والے لوگوں کو اعتراض ہے ـ خاص طور پر ہزارہ ڈویژن اور ڈیرہ اسماعیل خان ڈویژن کے رہنے والے لوگ اس نام کے خلاف تحریک چلانے میں پیش پیش ہیں ـ

Saturday, April 10, 2010

زندگی

سقراط سے پوچھا گیا۔
"موت سے بھی کوئی سخت ترین چیز ہے؟"

Wednesday, April 7, 2010

ثانیہ شعیب رومانس کے سحر میں دونوں ہی ملک گرفتار ہیں


پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان شعیب ملک اور بھارت کی ٹینس اسٹار ثانیہ مرزا نے جب یہ اعلان کیا کہ وہ شادی کرنے جا رہے ہیں اسی وقت سے ہی سازشوں اور الجھنوں نے سر اٹھا لیا۔ بھارت کی دائیں بازو کی جماعت بی جے پی نے ثانیہ مرزا کو ایک پاکستانی سے شادی کے فیصلے پر نظر ثانی کا کہا ہے جب کہ بھارت کی مرکزی جماعتیں اس مسئلے پر خاموشی طاری کیے ہوئے ہیں۔