ShareThis

Sunday, July 19, 2009

شادی شدہ “شہیدوں“ کے نام

ماں نے کہا کہ بیٹی! نہ شوہر پہ ظلم کر
ایسا نہ ہو کہیں وہ تیرا سر ہی پھوڑ دے

سختی بجا ہے، باندھ کے رکھنا بھی ٹھیک ہے
’’ لیکن کبھی کبھی اسے تنہا بھی چھوڑ دے

5 comments:

  1. کس بات کی ہائے ہائے ہے فرحان شادی شدہ شہیدوں میں شامل نہ ہونے کی :wink: :lol:

    ReplyDelete
  2. فرحان کیا ہوا میرا تبصرہ کیا پسند نہیں آیا تھا جو شامل نہ کیا :sad:

    ReplyDelete
  3. تبصرہ شامل کر دیا ہے

    ReplyDelete