ShareThis

Saturday, December 12, 2009

جنت زمین پر

جنوبی وزیرستان میں سکیورٹی فورسز نے بیت اللہ محسود کی زیر نگرانی تربیتی مرکز نواز کوٹ میں دہشت گردوں کی ”مصنوعی جنت “ دریافت کرلی ہے، جہاں خود کش حملہ آوروں کو ذہنی تربیت دیکر حملوں کیلئے تیار کیا جاتا تھا۔  اس  ”مصنوعی جنت “ میں بیت اللہ محسود کی زیر نگرانی 12سے 18سال کی عمر کے خودکش حملہ آور تیار کئے جاتے تھے۔ ان خودکش حملہ آوروں کونواز کوٹ کے تربیتی مرکز میں مصنوعی جنت کے نظارے کرائے جاتے مخصوص کمروں کی دیواروں پر رنگ برنگی پینٹنگز بنائی گئی تھیں جن میں دودھ اور شہد کی نہریں خوبصورت نظارے اور ان نہروں کے کنارے حوروں کی تصاویر بنائی گئی تھیں۔ معصوم بچوں کو جنت کے خواب دکھا کر اور حوروں کی قربت کا یقین دلا کر دودھ اور شہد کی بہتی نہروں کی پرکشش منظر کشی کے ذریعے معصوم لوگوں کو خودکش دھماکوں میں قتل کرنے پر اکسایا جاتا تھا ۔ اس تربیتی مرکز میں ایک مذبح خانہ بھی قائم تھا جہاں سکیورٹی فورسزکے مغوی اہلکاروں کو ذبح کیا جاتا تھا ۔

7 comments:

  1. اللہ پاکستان کے ، مسلمانوں کے اور انسانیت کے دشمنوں کو غارت کرے اور ہمیں نادان دوستوں سے اپنی پناہ میں رکھے آمین یا رب العالمین!

    ReplyDelete
  2. ایک عام انسان کا جنت کا حاصل کرنا بہت مشکل کام ھے
    اپنے نفس کو مارنا پڑتا ھے
    ایسے جنت حاصل کرنا بہت آسان ھے صرف ایک بٹن ھی دبانا پڑے گا
    اور سامنے حوریں استقبال کرینگی

    ReplyDelete
  3. بھائی کوئی ربط اس خبر کا؟ کوئی تصویر؟

    ReplyDelete
  4. حوریں یا بدروحیں

    ReplyDelete
  5. آپ نے جو لکھا ہے، اس کا کوئی ثبوت ہے آپ کے پاس؟ اگرایسا ہوتا تو میڈیا پی ضرور آتا. لگتا ہے ک آپ نے عبدل حلیم شرر کے ناول فردوس بریں سے آئیڈیا چرا کر ایک فرضی پلوٹ تیار کیا ہے. اس بات کا یہ مطلب نہی ک میں طالبان کا حامی ہوں. مجھے صرف آپکی فرضی کہانی پسند نہی آئی.

    ReplyDelete
  6. http://search.jang.com.pk/details.asp?nid=٣٩٤٢٨٨
    http://www.dailyaaj.com.pk/Details.php?NewsCategoryId=1&NewsId=٨٢٥٣
    http://www.jang.net/urdu/details.asp?nid=394436

    ReplyDelete
  7. آپ اخبار پڑھا کرو اور ٹی وی دیکھا کرو ثبوت ہی ثبوت ملیں گے

    ReplyDelete